قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق کا عمران ریاض کی گرفتاری پر نوٹس

0
183
عمران ریاض

 2022-2 جولائی 

ریحان پراچہ


لاہور

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق نے صحافی اور اینکرپرسن عمران ریاض خان کی گرفتاری نوٹس لیا ہے جبکہ  ایمنسٹی انٹرنیشنل نے انکی گرفتاری پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے۔

دوسری طرف پنجاب کے وزیر قانون محمّد احمد خان کا کہنا ہے کہ صحافی عمران ریاض خان کے خلاف ملک کے خلاف جنگ  چھیڑنے جیسے سنگین الزامات ہیں اور قانون کے تحت انہیں اپنے خلاف درج مقدمات کا عدالتوں میں سامنا کرنا پڑے گا۔ عمران ریاض خان کے وکلا کی جانب اسلام آباد ہائی کورٹ میں دائر درخواست پر عدالت نے انہیں لاہور ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا حکم دیا ہے۔

اٹک پولیس نے اسلام آباد ٹول پلازا سے عمران ریاض کو گرفتار کیا تھا۔ پولیس کے مطابق عمران ریاض  کے خلاف ایف آئی آر درج ہے جس میں ان کے خلاف ملک کی سالمیت کو خطرے میں لانے کے الزامات ہیں۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوۓ وزیر قانون محمّد احمد خان نے کہا  عمران ریاض خان  کے خلاف تعزیرات پاکستان کی شق ١٢١-اے کے تحت مقدمات درج ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت آزادی رائے پر یقین رکھتی ہے لیکن ان قیود میں جو آئین میں درج ہے۔ شق ١٢١-اے پاکستان کے خلاف جنگ چھیڑنے یا جنگ چھیڑنے کی کوشش کرنے کے مطلق ہے۔ وزیر قانون محمّد احمد خان کے مطابق عمران ریاض کی خلاف مقدمہ ان کی حالیہ بلاگ پر بنایا گیا جس میں پاکستان کے سعودی عرب کے تعلقات پر بات کی گئی تھی۔ انھوں نے ایف آئی آر کے مطلق مزید تفصیل نہیں دی اور نہ ہی یہ وضاحت دی کہ آیا کے مقدمہ پنجاب کابینہ کے حکم پر درج کیا گیا یا کسی شہری کی درخواست پر۔ قانون کے تحت شق ١٢١-اے کے تحت مقدمہ صرف  پنجاب حکومت یا وفاقی حکومت کی طرف سے ہی دائر ہو سکتا ہے۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انسانی حقوق کے  چیئرمین سینیٹر ولید اقبال نے عمران ریاض خان کی گرفتاری کا سخت نوٹس لیتے ہوۓ وزارت انسانی حقوق سے اس حوالے سے اگلے چوبیس گھنٹوں کے اندر تفصیلی رپورٹ طلب کی ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی  عمران ریاض خان کی گرفتاری پر تشویش ظاہر کی ہے۔ اپنے بیان میں ایمنسٹی انٹرنیشنل نے حکومت پر زور دیا کہ وہ اختلافی آوازوں کو سزا دینا بند کریں، جیسا کہ پاکستان میں کئی سالوں سے تشویشناک رجحان رہا ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل کا مزید کہنا تھا کہ گزشتہ چند ہفتوں میں صحافیوں کو غائب کر دیا گیا اور محض اپنا کام کرنے کی وجہ سے ان پر تشدد کیا گیا۔

پی ٹی آئ کے سربراہ عمران خان نے بھی عمران ریاض خان کی گرفتاری کی شدید مذمّت کرتے ہوۓ کہا قوم کو حکومت کےسامنےجھکانےکیلئےملک فسطائیت کے سپردکیا جارہاہے_انہوں مزید کہا کہ وقت آگیا ہےکہ ہرشخص خصوصاً اہلِ قلم وصحافت  یکجا ہوکر اس فسطائیت کیخلاف کھڑےہوں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here