٦ فروری ٢٠٢٤

سٹاف رپورٹ


لاہور 

گجرات کے صوبائی حلقہ پی پی اٹھائیس میں تین بھائی تین مختلف جماعتوں سے الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں.مسلم لیگ (ن) کے امیدوار شبیر رضا کوٹلہ دن کے اجالے میں ڈھول کی تھاپ پر کھلے میدانوں میں الیکشن مہم جاری رکھے ہوئے ہیں جبکہ ان کے مد مقابل تحریک انصاف کے حمایت یافتہ آزاد امیدوار شاہد رضا رات کی تاریکی میں بند کمروں میں اپنی کیمپین کرنے پر مجبور ہیں۔ تیسرے بھائی نعیم رضا مسلم لیگ (ق) کی ٹکٹ پر الیکشن میں حصہ لیں گے۔

تحریک انصاف کے حمایت یافتہ شاہد رضا کا کہنا ہے کہ ان کو کمپین کرنے کی اجازت تک نہیں ہے۔ وائس پی کے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پابندیوں کے باوجود وہ اس حلقے سے کامیاب ہوں گے۔تاہم ن لیگ کے شبیر رضا کا کہنا ہے کہ سب کو برابری کے مواقع مل رہے ہیں لیکن مسلم لیگ ق کے امیدوار کو انتظامیہ کی مخصوص حمایت حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ سب جماعتوں کے امیدوار بھرپور کیمپین کر رہے ہیں۔

شبیر رضا کا کہنا تھا کہ جس حالات کی شکایت آج ان کے تحریک انصاف والے بھائی کر رہے ہیں یہی سب کچھ مسلم لیگ ن کے ساتھ گزشتہ انتخابات میں ہوا تھا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں ٢٠١٨ میں سادہ کاغذ پر بھی نتائج نہیں ملے تھے۔تاہم شاہد رضا کہتے ہیں جو آج ان کے ساتھ ہو رہا ویسا ظلم ٢٠١٨ میں نہیں ہوا تھا۔ ‘بتائیں ٢٠١٨ میں کس کے جلسوں کو روکا گیا؟ کس کہ گھر پر ریڈ ہوا؟’دونوں بھائی سمجھتے ہیں ہیں کہ ان کے نظریات ایک دوسرے سے مختلف ہیں اس لئے وہ ایک دوسرے کے خلاف الیکشن لڑ رہے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here