٦ مارچ ٢٠٢٤

تحریر : اعتزاز ابراہیم


لاہور

ذوالفقار علی بھٹو صدراتی ریفررنس پر سپریم کورٹ کی رائے کو قانونی ماہرین نے عدالتی تاریخ میں اہم سنگ میل قرار دے دیا۔سپریم کورٹ کے نو رکنی لارجربینچ کی رائے جس میں کہا گیا کہ ذوالفقار علی بھٹو کو فیئر ٹرائل کا موقع نہیں دیا گیا پر ماہر قانون دان اعتزاز احسن کا وائس پی کے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ

تاریخ میں ایسی مثالیں بہت کم ملتی ہیں جس میں عدالت اپنے کئے گئے حتمی فیصلہ پر رائے دے کہ اُس وقت آئین اور قانون کے مطابق فیصلہ نہیں کیا گیا۔

سینئر قانون دان عابد ساقی کا سپریم کورٹ کی رائے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اس رائے سے ایک نیا باب کھلے گا کہ سپریم کورٹ کے وہ فیصلے جو جبر اور خوف میں کئے گئے ہیں ان پر نظر ثانی کر کے انکا ازلہ کیا جائے گا۔

ماہر قانون دان خالد رانجھا کا بھٹو ریفرنس پر سپریم کورٹ کی رائے پر گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سپریم کورٹ کے بے شمار فیصلے ایسے ہیں جو غلط ہیں اور ان ٖفیصلوں پر نظز ثانی کر کہ ان کو درست ہونا چاہیے۔

بھٹو ریفرنس کیس پر عدالت کی جانب سے ریمارکس دیے گئے کہ تاریخ میں کچھ کیسز ہیں جنہوں نے تاثر قائم کیا عدلیہ نے ڈر اور خوف میں فیصلہ دیا، ماضی کی غلطیاں تسلیم کیے بغیر درست سمت میں آگے نہیں بڑھا جا سکتا۔ اعتزاز اباراہیم وائس

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here