۸ مئی ۲۰۲۴

تحریر : اعتزاز ابراہیم


لاہور

لاہور کی سول عدالتوں کی منتقلی اور وکلا پر دہشتگری کے مقدمات کے خلاف وکلا کی احتجاجی ریلی پر پولیس کا وکلا پرلاٹھی چارج آنسو گیس کی شیلنگ اور واٹر کینن کا استعمال کیا ۔30 سے زائد وکلا گرفتار متعدد وکلا زخمی ہوگئے۔پاکستان بار کونسل کے صدر احسن بھون نے پولیس کی جانب سے وکلا پر تشدد اور گرفتاریوں کے خلاف کل ملک بھر میں ہڑتال کی کال دے دی۔

پولیس اور وکلا کے درمیان پیدا ہونے والی کشیدہ صورتحال کے باعث مال روڈ اور اطراف کی سڑکوں پر ٹریفک کی روانی بھی شدید متاثر ہوئی ہے اور گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئی ہیں، جی پی او چوک پر میٹرو بس اسٹیشن بھی بند کردیا گیا ہے۔پاکستان بار کونسل نے پولیس تشدد کے خلاف کل ہڑتال کی کال بھی دے دی ہے، وکیل رہنما احسن بھون کا کہنا ہے کہ کل ملک بھر میں احتجاج ہوگا اور کوئی وکیل عدالت میں پیش نہ نہیں ہوگا، احسن بھون نے کہا کل ملک بھر میں وکلا ریلیاں نکالیں گے۔

لاہور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر اسد منظور بٹ کا وائس پی کے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ’ لاہور بار ایسوسی ایشن کے پرامن احتجاج پر پولیس نے دھاوا بولا اور تشدد کیا مطالبات کی منظوری تک احتجاج جاری رکھے گے۔‘

صدر لاہور بار منیر بھٹی کا کہنا ہے کہ  ’ہمارا مطالبہ ملک مین قانون کی حکمرانی ، انصاف کی فراہمی اور آزاد عدلیہ ہے، انہوں نے کہا عدالتوں کی منتقلی کے نوٹس اور 7 اے ٹی اے واپس لئے جائیں۔‘

لاہور ہائی کورٹ بار ایسویسی ایشن کی سابق نائب صدر رابیعہ باجوہ کا وائس پی کے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ’اپنے حق کے لئے احتجاج کرنے والے وکلا پر دہشت گردی کے مقدمات درج کئے جارہے ہیں۔‘

وکلا احتجاج پر پولیس تشدد پرمریم نواز نے ایکس پر پیغام جاری کرتے ہوئے آئی جی پنجاب پولیس کو وکلاء کےخلاف طاقت کےاستعمال سے گریز کرنے کی ہدایت کی ہے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here