۳۱ مئی ۲۰۲۴

تحریر: اسلام گل آفریدی


تیراہ 

سال 2012 میں دہشت گردی کے خلاف جاری فوجی آپریشن کی وجہ سے ضلع خیبر کے دیگر علاقوں طرح وادی تیراہ سے کوکی خیل قبیلے کے سینکڑوں خاندان نقل مکانی کرکے خبیر کی تحصیل جمرود پہنچے لیکن تکنیکی وجوہات کی بنا پر نقل مکانی کرنے والے تمام خاندانوں کی ایف ڈی ایم اے نے رجسٹریشن نہیں کی ۔

مقامی عمائدین کے مطابق 260 خاندان مقامی انتظامیہ نے جبکہ 18سو خاندان الخدمت فاونڈیشن نے رجسٹر کئے اور فاٹا ڈیز اسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (ایف ڈی ایم اے)نے 1403خاندانوں کی رجسٹریشن کرائی۔ مقامی لوگوں کا دعوی ہے کہ بے گھر خاندانوں کی تعداد بیس ہزار تک ہے تاہم پی ڈے ایم اے کے مطابق موجودہ وقت میں صرف شمالی وزیر ستان کے 7ہزار459خاندانوں کے علاوہ کسی دوسرے ضلع کا بے گھر خاندان موجود نہیں۔

موجودہ وقت میں کوکی خیل سیاسی قیادت کا دعوی ہے کہ اُن کے سات ہزار سے زائد خاندان اپنے علاقوں میں واپس میں جانے کے منتظر ہیں۔اس ضمن میں کئی بار احتجاجی دھرنے بھی ہوئے جس پر حکومت نے ان بے گھر افراد کو واپس بھیجنے کے وعدے بھی کئے تاہم وہ وعدے وفا نہ ہو سکے۔ چند روز قبل مقامی اور سیاسی عمائدین نے بے گھر خاندانوں کی واپسی کا فیصلہ کیا لیکن سیکورٹی فورسز نے اُن کو وادی تیراہ جانے روک دیا جس پر احتجاج بے گھر خاندانوں کے افراد نے احتجاجا پاک افغان شاہرا ہ بلاک کر دی۔ مظاہرین کے نمائندہ وفد نے کمشنر پشاور ریاض محسود کے ساتھ ملاقات کی اور فیصلہ ہوا کہ پانچ جون سے بے گھر افراد کی مرحلہ وار واپسی کا عمل شروع کیا جائیگا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here