رائٹس واچ | 17 فروری 2023

0
72

لاپتہ 4 سالہ بچہ دو ہفتے بعد قریبی تالاب میں مردہ پایا گیا

لاپتہ ہونے کے دو ہفتے بعد لاپتہ بچے کی لاش قریبی تالاب سے ملی۔ 4 سالہ اویس 3 فروری کو کوٹ عالیان میں اپنے گھر کے قریب کھیلتے ہوئے لاپتہ ہو گیا تھا۔
تلاش اور پولیس کیس کے باوجود بچہ اس وقت تک لاپتہ رہا جب تک کہ گھر والوں کو اس کی بوسیدہ لاش نہ ملی۔
پولیس نے لاش کو تحویل میں لے کر تفتیش کے لیے چارسدہ کے اسپتال منتقل کر دیا ہے۔

 

کراچی میں شادی کی تقریب میں آوارہ گولی لگنے سے 2 سالہ بچہ جاں بحق

کراچی میں شادی کی تقریب میں فائرنگ سے دو سالہ بچہ گولی لگنے سے جاں بحق ہوگیا۔ سجاد حسین کو اپنی فیملی کی گاڑی سے اترتے ہی سر میں آوارہ گولی لگی۔
ہنگامی طبی علاج کے باوجود وہ جمعرات کو ایک نجی اسپتال میں انتقال کر گئے۔
پولیس نے ریاست کی جانب سے مقدمہ درج کر لیا ہے کیونکہ متاثرہ خاندان قانونی کارروائی نہیں کر رہا ہے۔

 

ٹوئٹر پر پاک فوج کو بدنام کرنے پر پی ٹی آئی کے سپورٹر کو 3 سال قید کی سزا 

ٹوئٹر پر پاک فوج اور اعلیٰ عسکری قیادت کو بدنام کرنے پر پی ٹی آئی کے ایک حامی کو تین سال قید کی سزا سنادی گئی۔ سکندر زمان کو گزشتہ سال ہیلی کاپٹر کے واقعے سے متعلق ایک ٹویٹ پوسٹ کرنے کے بعد گرفتار کیا گیا تھا جس کا مقصد معاشرے میں خوف و ہراس پھیلانا تھا۔
عدالت نے انہیں الیکٹرانک کرائمز ایکٹ اور پاکستان پینل کوڈ کی مختلف دفعات کے تحت مجرم قرار دیا۔ زمان کا موبائل فون اور ٹوئٹر اکاؤنٹ ضبط کر لیا گیا، اور اس پر جرمانہ عائد کیا گیا۔
اس کے ضامن کو ضمانتی مچلکے کی ذمہ داری سے بری کردیا گیا، اور موبائل فون ریاست کے حق میں ضبط کرلیا گیا۔ حکمراں اتحاد نے پی ٹی آئی کی سوشل میڈیا ٹیم پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے کہنے پر مہم شروع کی۔

 

لاہور میں کمسن لڑکے سے زیادتی اور تشدد

لاہور کے علاقے مناواں میں 4 ملزمان نے 13 سالہ لڑکے کو مبینہ طور پر زیادتی اور تشدد کا نشانہ بنایا۔ ویڈیو بنانے کے بعد اسے کھیت میں پھینک کر فرار ہو گئے۔
احمد، ثاقب اور دو نامعلوم ملزمان نے ولید کو گلی سے اغوا کر لیا۔ اس نے مبینہ طور پر اسے گھر لے جا کر اس کی عصمت دری کی۔
پولیس نے دونوں ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

 

ہائی کورٹ نے ریپ کیس میں دو ملزمان کی ضمانت منظور کر لی

لاہور ہائی کورٹ ملتان بنچ کے جج جسٹس طارق ندیم نے بدعنوانی کے مقدمے میں ملزم کی ضمانت منظور کر لی اور ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر مظفر گڑھ صفدر حسین کیس میں ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کے بعد رہا کر دیا۔ ملزم کلیم اللہ کے خلاف تھانہ قریشی ضلع مظفر گڑھ میں مقدمہ نمبر 816/22 جرم 377,511 درج تھا۔

اسی طرح کمسن بچے کے ساتھ جنسی زیادتی کے ایک اور کیس میں بھی ملزم کو جسٹس علی ضیا باجوہ نے ضمانت پر رہا کر دیا۔ ملزم محمد مجاہد نے گرفتاری کے بعد درخواست ضمانت دائر کی تھی اور اس کے خلاف تھانہ گلیوال ضلع لودھراں میں مقدمہ نمبر 458/22 جرم 377,511 درج کیا گیا تھا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here